یاد ماضی

یاد ماضی

یاد ماضی

            یاد ماضی کی حسین یادیں کون بھول سکتا ہے ۔۔۔کھبی کھبی آپ اپنی ایک دنیا میں گم۔۔۔۔اپنے شعور کی اس مستی میں گم جس میں آپ کے ارد گرد بہت کچھ ہونے کے باوجود کچھ محسوس نہیں ہوتا۔۔۔۔اس شعور میں یا تو آپ اپنے ماضی کی کسی حسین دور کو یاد کررہے ہوتے ہیں اور کھبی کھبی کسی تلخ دور کا بھی آپ کو پھر سے احساس ہوتا ہے ۔۔۔لیکن اس ماضی کی ہر یاد۔۔۔حسین ہی لگتی ہے ۔ کھبی اس کو محسوس کریں ۔۔۔۔چاہے وہ حسین ہو یا تلخ یاد ۔۔۔لیکن آپ کے حال میں وہ حسین یاد بن کہ رہ جاتی ہے ۔۔۔۔میرا اور آپ کا ماضی کتنا حسین تھا۔۔۔ہر گزرا ہوا وقت نہ جانے کیوں گزر جانے کے بعد حسین کیوں لگتا ہے۔۔۔۔ان یادوں کے وہ پل جو کھبی بڑے گراں گزرے تھے نہ جانے اب میرے اس حال میں مجھے حسین لگتے ہیں۔۔۔۔گزرے ہوئے زندگی کہ وہ ایام ۔۔۔۔بچپن کی حسین یادیں۔۔۔معصوم سوچ اور سکول کی شرارتیں۔۔۔کالج کی زندگی۔۔۔۔خیالوں کی زندگی۔۔۔۔دوستوں کی وہ محفل۔۔۔۔پڑھائی ۔۔۔مستقبل کےحسین خواب ۔۔۔۔ایک عزم و جوش ۔۔۔۔پھر سے آپ کو ایک نئی کیفیت میں مبتلا کرد یتے ہیں۔۔۔۔ابھی آپ اس مضمون کو پڑھتے ہوئے ذرا رک کہ۔۔۔۔۔ اپنے آپ کو ماضی میں لے جائیں۔۔۔ پھر زندگی کے ان لمحات کو پھر سے یاد کریں ۔۔۔۔کسی ایک پل کو ہی ۔۔۔۔۔کتنے حسین لمحات تھے۔۔۔لیکن ہر گزرا ہو وقت اپنے جانے کے بعد ماضی کا ایک حصہ بن جاتا ہے۔۔۔ آپ اپنے دل و دماغ کے کسی شعور میں اس کو کسی ایک کارنر میں ضرور سجائیں رکھیں ۔۔۔تا کہ آپ کھبی کھبی اس کو یاد رکر لیں ۔۔۔۔اور اس بے حال ۔۔۔حال میں مشینوں اور افرا تفری کے اس دور میں آپ ماضی کی کسی یاد کو پھر سے یاد کر لیں ۔جو آپ کو شاہد کہ اشکبار کر دے ۔۔۔۔ہاں کھبی کھبی اپنے آپ سے باتیں کرکہ بھی رو لیا کریں ۔۔۔۔جہاں صرف صرف آپ ہوں اور کوئی نہیں ۔۔۔۔

یاد ماضی

            پھر یہی ماضی آپ کو کھبی اشکبار بھی کر دے گا۔۔۔ضروری نہیں کہ وہ کوئی تلخ بات ہو بلکہ ماضی میں ہونے والے بہت سارے خوشیوں کے لمحات جو آپ نے کسی مخصوص پل میں گزارے تھے ان کو یاد رکر کہ آپ اشکبار ہو جائیں۔۔۔میری اور آپ کی زندگی کی گھڑی ۔۔۔۔۔ہر وقت رواں دواں ہے ۔۔۔میں اور آپ مستقبل کی بہت بڑی پلاننگ کر رہے ہیں۔۔۔لیکن یہ زندگی ۔۔۔۔۔!!کھبی سوچیں کہ آپ کی زندگی کا ٹائم پریڈ ایک سٹاپ واچ پر فکس کر دیا گیا ہے ۔۔۔۔۔اور اب وہ الٹی گنتی شروع ہو چکی ہے ۔۔۔۔کھبی آپ محسوس تو کریں ۔۔۔۔ابھی سو چ کہ میری اور آپ کی زندگی کا کاونٹر چل رہا ہے ۔۔۔اور اگرآپ اس گنتی کو سیکنڈ کے بجائے سال شمار کر لیں ۔۔۔تو 10,20,30,40,50,,,,اور پھر ۔۔۔۔

            ہم جو چاہیں لیکن وقت کی بے رحم لہریں مجھے اور آپ کو ساتھ بہا لے جائیں گی۔۔۔کھبی نہیں رکتا یہ وقت ۔۔۔۔میں اپنی گھڑی کا ٹائم پیچھے بھی کر لیتا ہو ں اپنے آپ کو سہار ا دینے کے لیے کھبی کر کہ دیکھیں آپ کتنے معصوم لگیں گے کہ آپ وقت کو دھوکہ دے رہے ہیں لیکن سوچیں وقت ہم پر ہنستا ہے ہاں جیت اسی کی ہے ۔۔۔۔ اور بچے گا تو صرف ماضی۔۔۔ میرا اور آپ کا ماضی۔۔۔۔۔اور دوسروں کے لیے بھی وہ ماضی ہی رہے گا۔۔۔کھبی وہ سوچیں گے ہم تھے ۔۔۔۔۔ہیں نہیں کیونکہ وہ اپنے حال میں ہمارا ماضی یاد کر یں گے ۔۔۔یا پتہ نہیں یاد بھی کریں یا نہیں!!

ہاں کھبی تنہائی میں بیٹھ کر رو لینا بھی اچھا رہتا ہے ۔۔۔۔جب آپ کو کوئی نہیں دیکھ رہا۔۔۔آپ خود بھی نہیں ۔۔!!ہاں اپنے آپ کو تنہائی کے اس عالم بیباں میں گم کر کہ دیکھیں ۔۔۔آپ کے آنسو ۔۔۔۔لیکن تھوڑی دیر بعد یہ آنسو بھی ایک ماضی بن جائیں گے ۔۔۔۔آپ دیکھ رہے ہیں کہ میر ی اور آپ کی زندگی کا ہر لمہ ماضی کا حصہ بن رہا ہے ۔۔۔۔میرے اور آپ کے دوست ،رشتہ دار، عزیز و اقارب سب ہیں ۔۔۔۔لیکن میں خود بھی تو ہوں ۔۔۔۔میں کیا ہو ں ۔۔۔۔۔کھبی اپنے ماضی کو جھانک کے اپنے آپ کو جانچ کریں آپ جان جائیں گے ۔۔۔کھبی کھبی صبح کے لمحات میں آپ اپنے گھر کی کھڑکی سے باہر جھانک کر دیکھیں ۔۔۔سورج نکلتے ہوئے اکثر ہمیں مستقبل نظر آتا ہے لیکن آپ اس وقت ماضی میں جھانک کر تھوڑا سا رو لیا کریں ۔۔۔۔۔جب آپ کے پاس کوئی نہیں ۔۔۔حتی کہ آپ خود بھی نہیں ۔۔۔۔ہماری اپنی بھی ایک دنیا ہے ۔۔۔اور وہ دنیا صرف میر ی اور آپ کی ہے ۔۔۔۔اس میں کوئی شریک نہیں کوئی بھی نہیں سوائے ہمار ے پروردگار کہ۔۔۔۔

            ہاں ہر آنے والا وقت کھٹن لگتا ہے ۔۔۔۔ہمیں بہت سنبھل کہ چلنا ہے ۔۔۔کیونکہ آنے والے وقت کا ہر لمہ ساتھ ساتھ ایک نئے ماضی کو جنم دے رہا ہے ۔۔۔۔تو کیا میں اور آپ اپنے ماضی کو حسین یادوں کے طور پر محفوظ کریں گے یا تلخ یادوں کے طور پر لیکن یاد رکھیں ماضی گزرنے کے بعد ماضی ہی ہوتا ہے ۔۔۔صرف میں اور آپ اس کو کسی کسی نہ کسی حال میں یاد کرتے ہیں ۔۔۔۔اپنے ماضی کو حسین بنانے کے لیے حال کو خوبصور ت بنائیں ۔۔۔!

Leave a Reply