We are living in the world of machines

!ہم مشینوں کی دنیا میں رہ رہے ہیں

We are living in the world of machines

ہم مشینوں کی دنیا میں رہ رہے ہیں​​ 

 1981میں​​ IBM​​ نے دنیا کا پہلا​​ Personal Computer​​ متعارف کروایا۔ لیکن آج دنیا میں کتنے​​ PCیوز ہو رہے ہیں اس کا صحیح اندازہ کرنا بھی مشکل ہے۔ مشینز جس طرح ہماری زندگیوں پر اثر انداز ہو رہی ہیں یہی وجہ ہے کہ ہم انسان بھی مشین کی طرح بن چکے ہیں۔ ہم دوسروں سے وہ​​ Expectationsبھی کرنے لگتے ہیں کہ جو ہدایات ہم دیں بس اس کا حل جلدی جلدی ہمیں مل جائے ۔ تو پلیز انسانوں اور مشینوں میں فرق رکھیے۔ خیر تو مشینز نے جس طرح ہماری زندگیوں کو بدل ڈالا ہے ۔اس کا اندازہ آپ ایسے کریں کہ ہمارے ارد گرد بہت سارے​​ Computer​​ کام کر رہے ہیں اور یہ ہماری زندگیوں کا اہم حصہ بن چکے ہیں ۔ ایک گھر کی مثال لیں تو دیکھیں​​ Digital Watch, Microwave Owen,​​ TV, Washing​​ Machine, Freezer etc​​ ۔ آج کا انسان مشینز پر بہت زیادہ انحصار کرتا ہے ۔ یقینا یہ ہمارے روزمرہ کاموں کو بہت آسان بنا رہی ہیں اور ہمارے زندگیوں کو پر آسائش بھی۔

اگر ہم​​ Computer​​ کی بات کریں تو ہم جانتے ہیں کہ یہ ایسی مشین ہےجو ہدایات کو​​ Processکرنے کے لیے​​ Programکی جا سکتی ہے ۔ہر کمپیوٹر کو کام کرنے کے لیے ایک​​ OS (Operating System)کی ضرورت ہوتی ہے ۔ حتی ٰ کہ ایک​​ TV Setبھی جس میں آپ ریموٹ کی مدد سے​​ Tuning​​ کرتے ہیں اس میں آپ​​ OSیوز کر رہے ہیںلیکن​​ Limited Purpose​​ ۔ تو اصل میں انسان نے یہ کوشش کی کہ وہ اپنی جیسی مخلوق بنائے جو بات کو سمجھیں ، اس پر عمل کریں ، ہماری خدمت کریں ، ہمارے بہت سے کام کریں، پھر انسان نے کہا وہ​​ Rationalبھی ہوں یعنی درست فیصلہ کر سکیں اس کا مطلب ہے مشین سوچ بھی سکے گی!ایک بہت اہم سوال کہ​​ Can Computer Think?

 5th Generationکمپیوٹرز میں ایک نہی اصطلاح سامنے آئی​​ AI(Artificial Intelligence)یہ کمپیوٹر سائنس کی وہ فیلڈ ہے جس میں یہ ایسی مشینز اور​​ Expert Systemبنانے کی تحقیق ہوتی ہے جو انسانوں جیسی ہوں۔ یعنی ایسے​​ System​​ جو سوچ سکھیں، جو​​ Observe​​ کریں اور حالات کے مطابق اپنے آپ کو ایڈجسٹ کر یں ! یہ بہت مشکل کام​​ ہے بہت ہی مشکل کہ ایک​​ Electronic Deviceکو آپ انسانی روح دینے کی کوشش کریں ۔ تو​​ Can Computer Think​​ کا جواب تو میرے خیال میں یہ ہو گا کہ​​ It Depends !لیکن کیا مشینز انسانوں کی طرح​​ Think, Observe & Learn​​ کر سکیں گی اور پھر چیزوں کو​​ Adopt​​ کر سکیں گی یہ ایک بہت بڑا چیلنج ہے لیکن انسا ن اس دوڑ میں کافی آگے جا چکا ہے اب پیچھے پلٹنا اس کی شان کے خلاف ہو گا۔ چنانچہ​​ Robotsانسانوں کی جگہ کام کر رہے ہیں اور یہ دن بدن انسانوں کےبہت قریب تر ہو تے جارہے ہیں جو اس بات کا ثبوت ہے کہ آگے بہت کچھ ممکن ہو گا۔ 1952میں​​ Turing Machine & Turing Test​​ کے ثابت ہو نے کے بعد​​ AIفیلڈ میں بہت کام ہوا۔ چنانچہ اس فیلڈ میں درج ذیل چیزوں پر تحقیق ہو تی ہے اور ان میں ہر ایک بہت دلچسپ ہے۔

Expert System:

Systems that, in some limited sense, can replace an expert a human expert like Doctor who​​ diagnoses​​ a patient's​​ disease​​ & suggest medicines

Robotics:

Natural language​​ processing, teaching​​ computers to understand human language, spoken as well as written Computer vision & Automatic machines that perform various tasks that were previously done by humans

Image recognition

& Business intelligence,​​ Neural​​ System (inspiration Based on​​ Human​​ Brain)

Rule-based systems:

Based on the principles of the logical reasoning ability of humans

Autonomous Web Agents:

Also known as mobile agents, softbots,​​ Computer program that performs various actions continuously, autonomously on behalf of their principal! The Semantic Web

چنانچہ آپ دیکھیں کہ ہم مشینوں کی دنیا میں کتنے گھل مل گے ہیں اور ہم یہ چاہتے ہیں کہ یہ ہماری ذہنوں کے مطابق کام کریں ، ایسا کس حد تک ممکن ہو گا اور کیا اس کے کچھ نقصانا ت بھی ہوں گے یہ کہنا قبل از وقت ہو گا ۔ اہم بات یہ ہے انسان اپنے آپ کو زیادہ سے زیادہ پرآسائش کرنے کے لیے ہر قسم کی جد ید سے جدید ایجادات کر تا رہا اور یہ سفر جاری رہے گا۔اس میںایک بات تو کہنا بہت اہم کہ ہر سسٹم کا اپنا ایک​​ Domainہو گا جس میں رہتے ہوئے وہ کام کرے تو کھبی پرابلم نہیں ہو گی ۔ لیکن مشین کو اگر سوچنے سمجھنے اور ایڈجسٹ ہونے کی صلاحیت ملنے کے بعد کیا مشین انسانوں کی بقا کے لیے کہیںنقصان دے تو نہیں ہو گی؟ تو یہ ایک نئی بحث ہے ۔​​ Hollywood​​ Movie​​ Robots​​ اور​​ Aliens Movies (Terminators &​​ Predators)انہی​​ Topics​​ پر مبنی ہیں۔​​ 

 

Leave a Reply